Connect with us

پاکستان

پنجاب گورنمنٹ نے کاروبار کی سہولت کے لیے آن لائن بلڈنگ پورٹل کا آغاز کردیا

حال ہی میں پنجاب کے چیف سکریٹری جواد رفیق ملک نے بلڈنگ پلانز آن لائن پورٹل کے آغاز کی منظوری دیدی ہے۔ اس پورٹل کا استعمال 450 میونسپل کارپوریشنوں اور بلدیاتی اداروں کے ذریعہ عمارتوں کے منصوبوں ، تکمیل سرٹیفکیٹ ، اور زمینی استعمال کے تبادلوں کے منصوبوں کو جاری کرنے کے عمل کو تیز اور بہتر بنانے کے لئے کیا جائے گا۔

اگلے ہفتے پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ (پی آئی ٹی بی) کے ذریعہ بلڈنگ پلانز آن لائن پورٹل کا  آغاز  کردیا  جائے  گا ہے۔ یہ  پورٹل نافذ ہونے کے بعد اس پلیٹ فارم کے ذریعہ تمام متعلقہ حکام کو براہ راست رابطے میں لاکر کاروبار کرنے میں آسانی کی سمت ایک اور قدم اٹھانے میں مدد کرے گا۔

تجارتی ، نیم تجارتی ، رہائشی اور صنعتی ڈھانچے کی عمارت سازی کے منصوبوں کو متعلقہ حکام اس پورٹل کے ذریعے منظور کرسکیں گے۔ درخواست کے 30 دن میں تکمیلی سرٹیفکیٹ دیئے جائیں گے۔ درخواست کے 45 دن میں زمین سے استعمال کے تبادلوں کا منصوبہ قبول کیا جائے گا۔ درخواست کے 60 دن میں نجی ہاؤسنگ اسکیم کے ترقیاتی منصوبے کی منظوری دی جائے گی۔

منظوری کے فیصلے کرنے میں متعدد حکام شامل ہیں۔ پہلے ، ہیڈ ڈرافٹسمین کو درخواست جمع کروانے کے ایک دن کے اندر پٹواری اور اسسٹنٹ میونسپل پلاننگ آفیسر ، اور ڈپٹی میونسپل پلاننگ آفیسر کو تین دن میں بلڈنگ پلان کی منظوری دینی ہوگی۔  اس کے بعد چیف کارپوریٹ آفیسر پانچ دن کے اندر معائنہ کرے گا اور رپورٹ کو اتھارٹی کو بھیجے گا۔ آخر میں منتظم چھ دن کے اندر اندر عمارت کے منصوبے کی حتمی منظوری جاری کردے گا۔

اونچی عمارتوں کو استثناء سمجھا جائے گا  اور ان کی منظوری واٹر اینڈ سینی ٹیشن ایجنسی (واسا) ، محکمہ ماحولیات تحفظ محکمہ (ای پی ڈی) ، اور ٹریفک انجینئرنگ اینڈ پلاننگ ایجنسی (ٹی ای پی اے) کی منظوری سے مشروط ہوگی۔ یہ محکمے یا تو درخواست جمع کروانے کے سات دن کے اندر ہی اعتراضات جاری کریں گے ، یا این او سی دیں گے۔

تمام فیصلے (منظوری ، اعتراضات یا رد) درخواست دہندگان کو واٹس ایپ ، ای میل ، اور بلڈنگ پلانز آن لائن پورٹل (جس میں رپورٹ کا تفصیلی ورژن ہوگا) کے ذریعے درخواست دہندگان کو آگاہ کیا جائے گا۔

Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

پاکستان

ایماراتی ایئرلائن نے پاکستان کے ساتھ اپنا ہوائی آپریشن معطل کردیا

متحدہ عرب امارات کی  قومی  ایئرلائن نے کرونا وائرس کی وجہ سے پاکستان کے لئے اپنا فلائٹ آپریشن معطل کردیا ہے۔ امارات ایئر لائن 3 جولائی کے بعد اس فیصلے پر نظرثانی کرے گی۔ یہ فیصلہ دبئی تا ہانگ کانگ کی پرواز میں سفر کرنے والے 26 پاکستانیوں میں وائرس کے مثبت ٹیسٹ آنے  کے  بعد کیا گیا تھا۔

ہانگ کانگ نے پیر کو کہا کہ کرونا وائرس کے 30 نئے کیسز درج کیے  گیے  ہیں اور ان میں سے 29 افراد کا تعلق پاکستان سے ہے۔  سرکاری اعداد و شمار کے مطابق منگل کی شام تک پاکستان میں کررونا وائرس کے واقعات کی تعداد بڑھ کر مجموعی طور پر 186،598 ہوگئی ہے۔

نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول سنٹر کے مطابق کوویڈ 19 سے متعلق اموات کی تعداد 3،716 ہوگئی ہے۔ جبکہ کم از کم 73،471 مریض مکمل طور پر صحت یاب ہوچکے ہیں۔

پنجاب میں سب سے زیادہ اموات ہوئی ہیں جہاں مجموعی طور پر  1،495 افراد  لقمہ  اجل  بن  گئے  ہیں۔ جبکہ سندھ اور خیبر پختونخوا میں بالترتیب 1،124 اور 843 اموات ہوئی ہیں۔ بلوچستان میں 104 اموات ریکارڈ کی گئیں۔ اسلام آباد میں 106 اموات؛ گلگت بلتستان  22؛ اور آزادکشمیر  22  اموات  ریکارڈ  ہوئی  ہیں۔

Continue Reading

پاکستان

کرونا سے جنگ میں چین نے پاکستان کی مکمل حمایت کا اعلان کردیا

چین نے کرونا وائرس کی وبائی بیماری سے نمٹنے کے لئے پاکستان کے تمام فورمز پر اپنی مسلسل حمایت کی یقین دہانی کرائی ہے۔  انٹر سروسز پبلک ریلیشنز (آئی ایس پی آر) کے مطابق میجر جنرل ڈاکٹر چاؤ فیہو کی سربراہی میں دس ممبر افراد  پر  مشتمل لبریشن آرمی (پی ایل اے) کی میڈیکل ٹیم نے چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کی۔

بات چیت کے دوران کرونا کو  کنٹرول سے متعلق امور اور اس وائرس کے خلاف پاکستان کی  صلاحیتوں  اور  جامع ردعمل پر تبادلہ خیال کیا گیا۔  چیف  آف  آرمی  سٹاف نے طبی سامان کی فراہمی اور دیگر امداد سے متعلق چین کی حمایت پر اظہار تشکر کیا۔ اُن  کا  کہنا  تھا  کہ چینی طبی ماہرین کے دورے سے پاکستان کو وبائی امراض کا مقابلہ کرنے میں مدد ملے گی۔

آئی ایس پی آر کے مطابق “آرمی  چیف نے کہا کہ اگرچہ دنیا کوویڈ 19 کے خلاف علاج تلاش کرنے کی کوششیں کر رہی ہے لیکن اس بیماری کو روکنے کے لئے قومی کوششوں اور اس کے معاشی اثرات کو فروغ دینے کے لئے کثیر القومی حمایت اور عالمی تعاون بہت ضروری ہے”۔

Continue Reading

پاکستان

سعودیہ عرب کے نئے اعلان کے بعد وزارت حج کا عازمین حج کی ادائیگیاں واپس کرنے کے لیے اجلاس طلب

وزارت مذہبی امور کا ایک ہنگامی اجلاس  طلب کیا  گیا  ہے  جس  میں سعودی عرب کے حج 2020 سے  متعلق  بیان  کے  بعد  کی  صورتحال  کا  جائزہ  لیا جائے  گا۔  سعودیہ  عرب  نے  اعلان  کیا  ہے  کہ  آنے  والے  حج  میں  صرف  محدود  تعداد  میں  اندورنِ  ملک  سے  زائرین  کو  آنے  کی  اجازت  دی  جائے  گی۔  وزارت  حج  کے  ترجمان  کے  مطابق  اِس  اعلان  کے  بعد  کی  صورتحال  پر  فیصلہ  کرنے  کے  لیے  اجلاس  طلب  کیا  گیا  ہے۔

وزارت مذہبی امور اور بین المذاہب ہم آہنگی کے ترجمان عمران صدیقی نے ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی عرب کے وزیر حج و عمرہ ڈاکٹر محمد صالح بن طاہر بینٹین نے اپنے پاکستانی ہم منصب پیر نور الحق قادری سے ٹیلیفون پر اُن  کو اس فیصلے سے آگاہ کیا۔ انہوں نے کہا “تازہ ترین پیشرفت کا جائزہ لینے کے لئے ایک ہنگامی اجلاس طلب کیا گیا ہے جس کے دوران ان افراد کو ادائیگیوں کی واپسی کے طریقہ کار پر تبادلہ خیال کیا جائے گا جنہوں نے حکومت کی حج سکیم کے لئے اپنا اندراج کرایا تھا”۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستانی سفیر، سفارتی عہدیدار اور مملکت میں پاکستان حج ڈائریکٹوریٹ اس سال ملک کی نمائندگی کریں گے۔

ایک رپورٹ کے مطابق رواں سال حج کے لئے مجموعی طور پر 179،210 پاکستانیوں نے اندراج کیا تھا، جن میں سرکاری اسکیم کے تحت 107،526 اور نجی اسکیم کے تحت 71،684 افراد شامل ہیں۔

سعودی حکومت نے پیر کے روز کہا کہ وہ کرونا وائرس کی وجہ سے وہ بیرون ملک سے آنے والے افراد کو رواں سال حج میں شرکت کرنے پر پابندی لگائے گی، جس کی  وجہ  سے صرف ایک محدود تعداد میں سعودی شہریوں اور رہائشیوں کو احتیاطی تدابیر  کے نفاذ کے ساتھ ہی حج کی سعادت حاصل ہوسکتی ہے۔ اس اعلان کا مطلب یہ ہے کہ جدید دور میں یہ پہلا سال ہے جب پوری دنیا کے مسلمانوں کو مکہ مکرمہ کی سالانہ زیارت کرنے کی اجازت نہیں دی گئی ہے، جس کو تمام مسلمان زندگی میں کم از کم ایک بار انجام دینے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

وزارتی  ترجمان  کا  کہنا  ہے  کہ  “یہ فیصلہ عوامی صحت کے نقطہ نظر سے حج کو محفوظ طریقے سے انجام دینے کو یقینی بنانے کے لیے لیا گیا ہے اور انسانوں کو اس وبائی مرض سے وابستہ خطرات سے بچانے کے لیے  اور تمام معاشرتی فاصلاتی پروٹوکول کو  اپناتے ہوئے اسلام کی تعلیمات کے مطابق انسانوں کی جانوں کے تحفظ کو  یقینی  بنانا  ہے”۔  گذشتہ دو ہفتوں کے دوران کرونا وبا میں اضافے کے بعد سعودی عرب میں کرونا وائرس کے معاملات کی تعداد 160،000 سے تجاوز کرگئی ہے  اور 1،307 اموات ہوئی  ہیں۔

مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ میں حج کے دوران تقریبا 25 لاکھ عازمین اسلام کے سب سے مقدس مقامات پر جاتے ہیں۔ سرکاری اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ سعودی عرب حج اور عمرہ کے سفر سے سالانہ 12 بلین ڈالر کماتا ہے۔  مملکت نے مارچ میں بین الاقوامی مسافر پروازوں کو روک دیا تھا اور مارچ میں مسلمانوں سے کہا تھا کہ اگلی اطلاع تک حج منصوبوں کو روک دیا جائے۔ عمرہ زیارت کے لئے بین الاقوامی آمد کو بھی مزید اطلاع تک معطل کردیا گیا ہے۔

Continue Reading
Advertisement

تازہ ترین

پاکستان5 months ago

ایماراتی ایئرلائن نے پاکستان کے ساتھ اپنا ہوائی آپریشن معطل کردیا

متحدہ عرب امارات کی  قومی  ایئرلائن نے کرونا وائرس کی وجہ سے پاکستان کے لئے اپنا فلائٹ آپریشن معطل کردیا...

پاکستان5 months ago

کرونا سے جنگ میں چین نے پاکستان کی مکمل حمایت کا اعلان کردیا

چین نے کرونا وائرس کی وبائی بیماری سے نمٹنے کے لئے پاکستان کے تمام فورمز پر اپنی مسلسل حمایت کی...

پاکستان5 months ago

سعودیہ عرب کے نئے اعلان کے بعد وزارت حج کا عازمین حج کی ادائیگیاں واپس کرنے کے لیے اجلاس طلب

وزارت مذہبی امور کا ایک ہنگامی اجلاس  طلب کیا  گیا  ہے  جس  میں سعودی عرب کے حج 2020 سے  متعلق ...

پاکستان5 months ago

وزیراعظم عمران خان نے انتہائی دباو کے باوجود ملک میں لاک ڈاون نہ لگانے کا فیصلہ کرلیا

وزیر اعظم عمران خان نے ایک بار پھر سخت تنقید کے باوجود ملک میں مکمل لاک ڈاؤن نہ لگانے کے...

پاکستان5 months ago

پی آئی اے کا کریش سے نقصان زدہ مکانوں کی تعمیر کا اعلان

کراچی  میں  ہونے  والے  پی  آئی  اے  کے  جہاز  کے  کریش  نے  پورے  ملک  کو  اشکبار  کر  دیا۔  22 مئی ...

Advertisement